81

آفریدی

مخزن افغانی میں افریدیوں کا تذکرہ نہیں ہے ۔ غالباً مصنف کو آفریدی قبیلہ کا علم نہیں تھا ۔ بعد کی کتابوں میں ان کا شجرہ نسب عثمان آفریدی بن برہان بن کیکی بن کڑلان آیا ہے ۔ محمد حیات خان آفریدی کی حیات افغانی نے لفظ آفریدی کو آفریدہ (خدا کی مخلوق) بتایا ہے ۔ مگر یہ صریحاً عہد حاضر کی پیداور ہے ۔

آفریدی قبیلہ کا حسب و نسب ہمیشہ ماہرین نسلیات کے لئے ایک معمہ رہا ہے ۔ بعض نے انہیں ہیروڈوٹس کے آپارتیوئے سمجھا ہے ۔ اس تعبیر کو گریسن اور اسٹائین نے بھی تسلیم کیا ہے ۔ لیکن ہخامنشی کتبوں میں یہ نام کہیں نہیں پایا جاتا ہے ۔ یہ امر بھی مشکوک ہے کہ آیا ہیروڈوٹس کا آپارتیوے کے سلسلے میں ان مساکن کا بیان ہے کہ جہاں آفریدی رہتے ہیں ۔ ان نسب ناموں پر اعتماد کرتے ہوئے جو غالباً جعلی ہیں ۔ ان میں آفریدیوں کو پٹھان یا افغان نسل کا ماننا ہے جن کا مورث اعلیٰ کڑلان تھا

آپارتیوے جس کا ہیروڈوٹس نے ذکر کیا ہے بہت سی وجوہات ایسی ہیں جن کی بنا پر یہ آپارتیوے قبیلہ نہیں ہوسکتا ہے ۔ غالب امکان یہی ہے کہ آپارتیوے سے مراد پارتھیا ہے ۔ غالب امکان یہی ہے کہ آفریدی کی اصل آل افریغوں خاندان سے ہے ۔ جو غالباً ترک نژاد تھے اور افریدون کو اپنا جد امجد کہتے تھے ۔ اس خاندان کا عربوں نے ذکر کیا ہے اور مورخین انہیں خداۃ جوزگان بھی کہتے تھے ۔

آل افریغوں غالباً ترک تھے اس لئے خود کو افریدون کے اخلاف بتاتے اور غالباً افریغوں ترکی لہجہ ہے ۔ جب کہ اس کلمہ کو مقامی لہجہ ’غ‘ خارج کرکے اس خاندان کو آفریدیوں کہا جاتا ہوگا اور فرد واحد کے لئے افریدی یا آفریدی استعمال کیا جاتا ہوگا اور رفتہ رفتہ اس کا اطلاق پورے قبیلہ پر ہونے لگا ۔ اس کی تصدیق اس طرح بھی ہوتی ہے کے اب بھی بعض اوقات قبیلے کے لئے آفریدیوں استعمال کیا جاتا ہے ۔

تہذیب و تدوین
عبدالمعین انصاری

اس تحریر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں