71

ترین

نعمت اللہ ہروی لکھتا ہے کہ ترین بن شرجنون بن سربنی بن قیس کے تین لڑکے تھے ۔ ایک کا رنگ کالا تھا ترین نے اس کا نام ’تور‘ (کالا) رکھا ۔ دوسرے کا رنگ گورا تھا ، اس کا نام سپین (سفید) رکھا اور تیسرے کا نام اودل تھی ۔ تور اور سپین دونوں ترین کے نام سے مشہور ہوئے ۔

افغانوں کے شجرہ نسب میں بہت سے کلمے تور سے بنے ہیں ۔ تور پشتو کلمہ ہے جس کے معنی تلوار کے ہیں ۔ ترخان خراسان کا قدیم قبیلہ تھا ۔ گمان یہ کہ قبل اسلام بھی ترخان خراسان میں آباد تھے اور زابلستان میں ابدالیوں کے مورثوں میں سے تھے ۔ اس کلمہ کا پہلا حصہ تر پشتو کے طور سے مطابقت رکھتا ہے ۔ پروفیسر مقبول بیگ درخشانی تاریخ ایران میں لکھتے ہیں کہ خزر قبیلہ کا سردار ترخان کہلاتا تھا ۔ کلمہ ترین کا پہلا حصہ تر ہے جو جب کہ ین نسبتی ہے ۔ گمان ہے ترخان امتعداد زمانہ سے ترین ہوگیا ۔ عبدالحئی حبیبی کا بھی یہی خیال ۔ (دیکھے تور)     

تہذیب و تدوین
عبدالمعین انصاری

اس تحریر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں