48

سروش

    زرتشتی مذہب کے فرشتوں یا مکلوں کے علاوہ ان سے بڑا ایک اہم فرشتہ شروش ہے ۔ یہ ان سب سے طاقت ور ہے اور اس کا جسم بھی مانا جاتا ہے ۔ یہ اہورا کے پیغامات کو پیغمبروں اور دوسرے انسانوں تک پہنچاتا ہے ۔ انسانوں کو بہشت میں پہنچانا اور مرنے کے بعد اسے جزا و سزا سنانا اسی کا کام ہے ۔ شروش یشت میں اس کی صفات تفصیل سے پیان کی گئی ہے ۔ اس کی ثنا بھی کی جاتی ہے ۔ خیرات و حسنات کا تعلق اس سے ہے اور اس کی توفیق اسی کی طرف سے ہوتی ہے ۔ اس کو روح الارواح کہا جاتا ہے ۔ دنیا کی حفاظت اس کی ذمہ ہے ۔ اگر یہ اپنے فرائض ادا کرنے میں زرا بھی کوتاہی کرے تو دنیا اہرمن کا شکار ہوسکتی ہے اور بدیوں سے بھر جائے ۔ اس کا کام یہ ہے دیوؤں کا مقابلہ کرنا ہے جو کہ اہرمن کے ساتھی ہیں ۔ اس لیے اہورا کے ساتھ اس کی ثنا کی جاتی ہے ۔ مگر اس کے ساتھ شروش یشت (۵۷) میں یہ کہا گیا ہے کہ سروش جو دو خالقوں کی عبادت کرتا ہے جس سے تمام چیزیں ہست سے وجود میں آئیں ۔ یہاں سوال یہ کھڑا ہوجاتا ہے کہ شروش کا خالق کون ہے ؟ اگر وہ ہرمزد کو خالق مانتا ہے تو وہ اہرمن کی عبادت کیوں کرتا ہے ؟ کیا اہرمن بھی اہورا مزد کا ہی روپ ہے ؟ بہرحال مذہب زرتشت میں شروش کی پرستش بھی کی جاتی ہے ۔ 

تہذیب و تدوین
عبدالمعین انصاری

اس تحریر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں