48

وید کا رودرا

جنگجو ماروتوں (طوفانی ہوائیں) جو لڑائیوں میں اندر کے ساتھ رہا کرتے تھے ۔ یہ ماروت پرشنی (بادل کی گائے اور پرشنی کے معنی ابلق کے ہیں اور اس کا مادہ پرش ہے جس کے معنی چھڑکنے کے بھی ہیں ۔ اس سے مشرک الفاظوں سے بہت کتھائیں پیدا ہوئی ہیں) رودرا کے بیٹے تھے ۔ رودرا کا درجہ وید کے دیوتاؤں میں نہایت ادنیٰ ہے ۔ مگر بعد کے زمانے میں ہندوؤں خصوصاً برہمنوں کے زمانے میں اس کا درجہ بڑھا دیا گیا ۔ محقیقین کا خیال ہے کہ رُدرا سے مراد طوفان خیز آسمان بمقابلہ پرسکون آسمان ہیں کے ہیں جسے وہ وارُن سے تعبیر کرتے ہیں ۔ لڈوِگ کا خیال ہے کہ آسمان (دیاؤس) کا قدیم ترین تخیل دو حصوں میں منقسم ہوگیا اور اخلاقی اور روحانی پہلو وارُن سے وابستہ ہوگیا اور دوسرا ابتدائی رُدرا سے ۔ یہ تخیل گو بعد کے زمانہ کا ہے مگر اندر سے قدیم ہے ۔ ردرا بجلی ڈھانے والا ہے ۔ بجلی اس کا مہلک تیر ہے ۔ اس لیے اس کے پرستش کرنے والے دعا مانگتے تھے کہ انہیں اور ان کی اولاد اور مویشی کو اس تیر سے محفوظ رکھے اور ضرورت ہو تو کسی دوسرے نشانہ بنائے ۔ رُدرا کے لفظی معنی ہولناک کے ہیں اور وہ ہولناک ہے بھی ۔ اس کے حسن ، جاہ و جلال اور مسیحائی کی بہت کچھ تعریف کی گئی ہے ۔ مگر یہ سب خوشامد خوف کی وجہ سے ہے ۔ اس سے کوئی امید ہوسکتی تھی تو یہ کہ انہیں محفوظ رکھے اور رُدرا اور اندر میں کس قدر فرق ہے ۔

تہذیب و تدوین
ّْْ(عبدالمعین انصاری)

اس تحریر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں