43

پرشنا

بعض جگہ پر وایو اور بعض جگہ سوم بارش دینے والے ہیں ۔ لیکن یہ یہ اندر نہ مروت نہ وایو نہ سوما ہے وہ ایک الگ دیوتا ہے ۔ یہ آریائی دیوتاؤں میں سب سے قدیمی ہے اسور اس کا نام پرگ دہاتو سے نکلا ہے جس کے معنی چھڑکنے کے ہیں ۔ اس سے پرشنا پرشتی جس کہ معنی چھڑکا ہوا پانی کا قطرہ وغیرہ ہیں ۔ نیز پرسو بادل پرسنی (چھڑکا ہوا بادل زمین) وغیرہ نکلتے ہیں ۔ پس پرجنیا کے اصل معنی یہ ہیں وہ جو آبپاشی کرتا ہے یا بارش دیتا ہے ۔ جب کہ آریہ نسل کے مختلف لوگ ادھر ادھر منتشر ہوئے تو ہندو ، ایرانی ، کیلٹ ، ٹیوٹنی اور سلیونک اقوام کے باپ دادا کے ساتھ بادل کے معنیوں میں لے گئے اور ان میں سے بعض الفاظوں محفوظ رکھا ۔ اس لفظ کو آریائی زبانوں میں اپنے قدیمی معینوں میں محفوظ رکھا جو اس قدیم ہونے کا ثبوت ہے ۔ 

تہذیب و تدوین
ّْْ(عبدالمعین انصاری)

اس تحریر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں