54

کماریان

زرتشت نے ہرمن کی اس طرح وضاحت کی ہے کہ تمام تاریکیوں و مقاسد کا منشاء و مصدر انگرامینو Angra Maniyu یا پہلوی اہرمن Ahriman جو مزدہ کا تصاد ہے ۔ اس کے چھ عوامل ہیں جن کو کماریکان Kamari Kan  کہتے ہیں ۔ ان کا کام شر کو عالم میں پھیلانا ہے ۔ یہ بھی ہرمزد کے فرشتگان کی طرح چھ ہیں اور ان کا اوستا میں ذکر نہیں آیا ہے ۔ ان کا بندہ ہشن میں پہلی دفعہ ذکر ملتا ہے اور ان میں سب سے بڑے رتبے کا حامل اکمنہ مانو کا ہے اور اگو مانو کے معنی معدوم کے ہیں ۔ اس کا کام انسانوں میں برے برے خیالات پیدا کرتا ہے اور انہوں گناہوں میں ملوث کرتا ہے ۔ یعنی یہ بہمن کا ضد اور مخالف ہے اور وہی اس کا مقابلہ کرتا ہے اور شہوت ، غضب ، کذب ، ظلمت اور زہرہ اس کے موکل ہیں ۔ ان کے نام حسب ذیل ہیں ۔

اکمنہ Akamanah یعنی تاریکی یا اندیشہ پلید ۔ جو وہومنو (نورانیت) سے متصادم ہے ۔

ایندرہ Andra یعنی کذب و فریب ۔ یہ اشہ و ہشیتہ (حقانیت) کے مد مقابل ہے ۔

سوروہ Sarva یعنی عجر و بے بسی نیز انتشار ۔ یہ خشرہ دائیریہ (مالکیت و قاہرت) کے مد مقابل ہے ۔

نااونگ ہئیی شیا Haong Haithya یعنی گندگی بہتان نیز طفیان ۔ یہ سپتہ ارمنینی (محبت و قدوسیت) کا حریف ہے ۔

تیئو روستی Thurvi یعنی شکستگی و کہنگی ۔ یہ آئیوروتات (سالمیت) کی ضد ہے ۔

زئی ریش Zairsh یعنی فنائیت و ناپائیداری ۔ یہ امرتات (ابدیت) کے مد مقابل ہے ۔

مذکورہ کماریکان کے علاوہ اہرمن کے ساتھی ہیں جن کو دیوا کہا جاتا ہے اور یہ اپنے امور یا برائیوں کو پھیلاتے ہیں ۔ ہندی شاخ کا نمائندہہ دئے وُ (دیو) تھے جن کا ممتاز نمائندہ خدائے جنگ اندرا تھا ۔ کمار راجپوتوں کا دیوتا تھا اور وہ اس کی پرستش کرتے تھے ۔ اس سے معلوم ہے قدیم آریا اہرمن کی پوجا کرتے تھے ۔

تہذیب و تدوین
عبدالمعین انصاری

اس تحریر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں